ماں کا وجود اللہ کی رحمت کا استعارہ اور مجسم تصویر ہے:پروفیسر قاری محمد مشتاق انور

جب تک یہ نعمت میسر رہتی ہے اس وقت تک انسان کو اس کی اہمیت کا کما حقہ ادراک نہیں ہو سکتا۔: بانی ادارہ صوت القرآن پاکستان جوہرآباد

جوہر آباد(نمائندہ Zنیوز)تجوید وقرأت کے شعبہ کے عالمی شہرت یافتہ استاد اور ادارہ صوت القرآن پاکستان جوہرآباد کے بانی پروفیسر قاری محمد مشتاق انور نے کہا کہ ماں کا وجود اللہ کی رحمت کا استعارہ اور مجسم تصویر ہے۔ جب تک یہ عظیم نعمت میسر رہتی ہے اس وقت تک انسان کو اس کی اہمیت کا کما حقہ ادراک نہیں ہو سکتا۔گزشتہ ایک ماہ سے میری والدہ محترمہ کی رحلت پر اظہار تعزیت کے لیے آنیوالے زندگی کے مختلف شعبوں کے کلیدی افراد کے اخلاق پر مجھے رشک آتا ہے اور میں صمیم قلب سے ان کا ممنون ہوں۔ انہوں نے ادارہ صوت القرآن میں تعزیت گزاروں کی مختلف نشستوں سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ایک ماہ کی مدت گزر جانے کے باوجود میں اپنی والدہ کے بچھڑنے کی کسک میں ذرہ بھر کمی محسوس نہیں کر سکا۔ وہ ایک نیک سیرت خاتون اور قرآن کریم کی تعلیمات کے فروغ کیلئے اہم کردار ادا کرنیوالی عظیم ماں تھیں میں ایسے موقع پر والدین کے احترام اور خدمت کا پیغام تلقین کے ساتھ چھوڑتا ہوں کہ جن کے والدین یا ان میں سے کوئی ایک موجود ہے تو ان کی قدر کرکے دنیا اور آخرت سنوارنے کی سبیل کی جائے۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.