العزیزیہ ریفرنس؛ نواز شریف کی درخواست ضمانت مسترد

اسلام آباد: العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں سابق وزیراعظم نوازشریف کی طبی بنیادوں پر سزا معطلی کی درخواست کو عدالت نے مسترد کردیا ہے

سلام آباد ہائی کورٹ کے جسٹس محسن اختر کیانی اور جسٹس عامر فاروق پر مشتمل 2 رکنی ڈویژنل بنچ نے سابق وزیراعظم نوازشریف کی طبی بنیادوں پر دائر درخواست ضمانت پر فیصلہ سنایا، عدالت نے مختصر فیصلے میں سابق وزیراعظم کی درخواست ضمانت کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف کو ابھی جیل میں رہنا پڑے گا۔

نوازشریف کی درخواست ضمانت کا تفصیلی فیصلہ کچھ دیر میں جاری کیاجائے گا جب کہ عدالت نے درخواست پر 20 فروری کو فیصلہ محفوظ کیا تھا۔

فیصلہ سنائے جانے کے موقع پر عدالت میں مسلم لیگ (ن) کے رہنماؤں اور کارکنوں کی بڑی تعداد موجود تھی جب کہ عدالت کے باہر سیکیورٹی کے بھی انتہائی سخت انتظامات کیے گئے تھے۔

واضح رہے کہ اسلام آباد کی احتساب عدالت نے سابق وزیر اعظم نواز شریف کو  فلیگ شپ انویسٹمنٹ ریفرنس میں بری کرتے ہوئے العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس میں 7 سال قید جب کہ ڈیڑھ ارب روپے اور 25 ملین ڈالر جرمانے کی سزا کا حکم سنایا تھا۔

جواب چھوڑیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا.